برطانوی حکمران جماعت کے پارلیمنٹرین چرچ کے اندر چاقو حملے میں ہلاک

0
50

لندن(این این آئی )برطانیہ کی حکمران جماعت سے تعلق رکھنے والے رکن پارلیمان سر ڈیوڈ امیس پر چرچ میں ایک حملہ آور نے چاقو سے کئی وار کیے جس کے نتیجے میں زندگی کی بازی ہار گئے۔ پولیس نے حملہ آور کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق 69 سالہ رکن پارلیمان پر اس وقت حملہ ہوا جب وہ ایک میتھوڈسٹ چرچ میں اپنے حلقے کے لوگوں سے مل رہے تھے۔عینی شاہدین کے مطابق کنزرویٹو جماعت سے تعلق رکھنے والے سر ڈیوڈ امیس پر چاقو سے کئی وار کیے گئے۔ ڈیوڈ ایمس مشرقی انگلینڈ کے علاقے ساتھ اینڈ کی نمائندگی کرتے ہیں۔ حملہ آور اس وقت چرچ میں داخل ہوا جب حلقے کا اجلاس جاری تھا جس میں ڈیوڈ ایمس بھی شامل تھے۔ کنزرویٹو جماعت سے تعلق رکھنے والے کونسلر جان لیمب نے ایک مقامی اخبار کو بتایا کہ رکن پارلیمان چرچ میں ہی ہیں اور انہیں اندر نہیں جانے دیا جا رہا۔ انہوں نے بتایا کہ صورتحال سنجیدہ لگ رہی ہے۔ڈیوڈ امیس کو موقع پر ہی طبی امداد فراہم کی جا رہی تھی کہ اسی دوران خون زیادہ بہہ جانے سے وہ انتقال کر گئے۔ ڈیوڈ امیس پہلی مرتبہ 1983 میں باسلڈن کے علاقے سے رکن پارلیمان منتخب ہوئے تھے۔ اس کے بعد 1979 میں ساتھ اینڈ کے حلقے سے انتخاب لڑا تھا۔ ڈیوڈ امیس کی ویب سائٹ پر دی گئی معلومات کے مطابق ان کی بنیادی دلچسپی جانوروں کی فلاح اور زندگی کے تحفظ سے متعلق مسائل میں ہیں۔