شازیہ مری کی ورلڈ بنک کے گلوبل ڈائریکٹر برائے سماجی تحفظ اور روزگار سے ملاقات

0
360

واشنگٹن (این این آئی)وفاقی وزیر برائے تخفیف غربت و سماجی تحفظ شازیہ مری نے ورلڈ بینک واشنگٹن ڈی سی میں ورلڈ بنک کے گلوبل ڈائریکٹر برائے سماجی تحفظ اور روزگار میکال رٹکوسکی سے ملاقات کی جس میں ڈائریکٹر رٹکوسکی نے کمزور اور غریب طبقے کو روزگار کے تحفظ کی فراہمی خصوصاً سیلاب کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال میں بی آئی ایس پی کے اہم کردار کا اعتراف کیا۔تفصیلات کیمطابق وفاقی وزیر شازیہ مری عالمی بنک کی دعوت پر امریکہ کا دورہ کر رہی ہیں۔ دورے کا مقصدسماجی تحفظ کے حوالے سے پاکستان کے تجربات سے آگاہی فراہم کرنا ہے۔ڈائریکٹر رٹکوسکی نے پاکستان میں حالیہ تباہ کن سیلاب کے دوران حکومت پاکستان کے موثر اور فوری ردعمل کے حوالے سے بی آئی ایس پی اور دیگر اداروں کے کردار کو سراہا۔ڈائریکٹر رٹکوسکی نے کمزور اور غریب طبقے کو روزگار کے تحفظ کی فراہمی خصوصاً سیلاب کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال میں بی آئی ایس پی کے اہم کردار کا اعتراف کیا۔انہوں نے بی آئی ایس پی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک کامیاب ماڈل ہے جسے خطے اور اس سے باہر کے ممالک میں بھی نافذ کیا جا سکتا ہے۔ وفاقی وزیر نے تباہ کن سیلاب کے دوران فوری طور پر تعاون کرنے پر حکومت پاکستان کی جانب سے عالمی بینک کا شکریہ ادا کیاشازیہ مری نے کہا کہ بی آئی ایس پی کا آغاز 2010 میں کیا گیا تھا اور تب سے یہ پاکستان کے غریب ترین خاندانوں اور کمزور طبقے کی بہتری کے لئے کامیابی سے کوشاں ہے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان میں سماجی تحفظ کا دائرہ کار وسیع کرنا خصوصاً تعلیم، صحت اور غذائی تحفظ ہماری اولین ترجیحات ہیں۔وفاقی وزیر شازیہ مری نے کہا کہ عالمی بینک کی جانب سے تکنیکی معاونت کی بدولت پاکستان میں سماجی تحفظ کے پروگراموں کی رسائی بہتر ہوگی بلکہ ان پروگراموں پر موثر عمل در آمد میں مدد ملے گی۔ ڈائریکٹر رٹکوسکی نے وفاقی وزیر کو یقین دلایا کہ عالمی بینک پاکستان میں فراہم کی جانے والی معاونت کو مزید وسعت دے گا تاکہ ہنر، تربیت اور دیگر ذرائع کو برؤے کار لاتے ہوئے ملک کی سماجی تحفظ کی حکمت عملی کو مزید موثر بنایا جا سکے۔