اس وقت تلخیاں کم اور بات چیت کرنے کی ضرورت ہے’فواد چودھری

0
0

لاہور( این این آئی) سابق وفاقی وزیر فواد چودھری نے کہا ہے کہ اس وقت تلخیاں کم اور بات چیت کرنے کی ضرورت ہے، پاکستان میں عمران خان کے بغیر سیاسی استحکام نہیں آسکتا۔انہوں نے لاہور میں انسداد دہشت گردی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تمام کیسز میں گفتگو یہی رہی کہ پولیس کے پاس کوئی ثبوت نہیں، ایک سال سے زیادہ عرصہ ہوگیا ضمانتیں چل رہی ہیں، ایک کیس میں نکلو تو اگلے میں گرفتار کر لیا جاتا ہے، ہماری پراسیکیوشن برانچ مکمل تباہ ہو چکی ہے۔پاکستان میں لاقانونیت کی کیفیت ہے، آئین کی قدر نہیں کی جا رہی، ججز کے خلاف مہم چلائی جاتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کا سیاسی نظام فارم 47پر کھڑا ہے، فارم 47کی حکومت خود کو بچانے کے لئے ہر وہ کام کر رہی ہے جس سے آئین متاثر ہو رہا ہے، ریاستی ڈھانچہ اداروں پر کھڑا ہوتا ہے، ایک ایک کر کے تمام اداروں کو ملیا میٹ کیا جا رہا ہے۔سابق وزیر کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان تباہ و برباد ہوگیا ہے، ایف آئی اے، پولیس اور پراسیکیوشن تباہ و برباد ہوگئی، اب عدالتوں کے پیچھے پڑگئے ہیں، جب آپ تمام ادارے تباہ کر دیں گے تو ملک کیسے چلائیں گے، عام آدمی کو بجلی کے بلوں نے متاثر کیا ہے، اگر ادارے تباہ کر دیئے تو ملک کو کیسے پائوں پر کھڑا کریں گے۔انہوں نے کہا کہ تنخواہ دار طبقے کو سمجھ نہیں آ رہی کہ زندگی کیسے گزارنی ہے، وزیر خزانہ ہالینڈ کے شہری ہیں، یہ پاکستان کے عوام کی کمر توڑ کر واپس جائیں گے، پاکستان میں سیاسی استحکام لانے کی ضرورت ہے، پاکستان میں عمران خان کے بغیر سیاسی استحکام نہیں آسکتا۔فواد چودھری کا مزید کہنا تھا کہ چائنہ، سعودی عرب، امریکا، یورپی یونین اور پوری دنیا کہہ رہی ہے آپ استحکام لائیں، عدم استحکام تب ختم ہوگا جب آپ عمران خان کو نظام میں لائیں گے، اس وقت تلخیاں ختم کرنے کی ضرورت ہے، گرینڈ پولیٹیکل ڈائیلاگ ہی پاکستان کا مستقبل ہے، عدم استحکام پاکستان کیلئے خطرہ بن چکا ہے۔