اسلام آباد،ایچ نائن کے سستے بازار میں لگنے والی آگ پر قابو پالیا گیا

0
0

اسلام آباد (این این آئی)وفاقی دارالحکومت کے ایچ نائن کے سستے بازار میں لگنے والی ہولناک آگ پر قابو پالیا گیا، ریسکیو آپریشن کے دوران فائربریگیڈ کی 31گاڑیوں کے علاوہ سی ڈی اے اور 1122 کے اہلکاروں نے حصہ لیا۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کے ایچ نائن میں بچت بازار آگ لگ گئی، شعلوں نے متعدد اسٹالز کو اپنی لپیٹ میں لے لیا، ریسکیو 1122 اور سی ڈی اے کے تقریباً 250 اہلکار آگ بجھانے کی کوششوں میں مصروف رہے۔ڈپٹی کمشنر اسلام آباد رانا وقاص نے بتایا کہ آگ جوتوں اور کپڑوں کے سیکشن میں لگی، جس نے مزید دکانوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا، آگ کی شدت بہت زیادہ تھی جس کے لیے پاکستان نیوی، ایئرفورس، دیگر اداروں سے فائر بریگیڈ کی گاڑیاں منگوائی گئیں۔دوسری جانب وفاقی وزیرداخلہ محسن نقوی نے اسلام آباد کے بچت بازار میں آگ لگنے کے واقعہ کا نوٹس لے لیا۔محسن نقوی نے چیئرمین سی ڈی اے و چیف کمشنر اسلام آباد محمد علی رندھاوا سے رابطہ کیا، وزیرداخلہ محسن نقوی کی ہدایت پر چیئرمین سی ڈی اے موقع پر پہنچے۔انہوں نے آگ پر قابو پانے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ریسکیو اور فائربریگیڈ کی ٹیم کی تعداد بڑھائی جائے، اضافی وسائل لگا کر آگ پر قابو پانے کے لیے اقدامات کیے جائیں۔وزیر داخلہ نے چیئرمین سی ڈی اے و چیف کمشنر اسلام آباد سے ریورٹ طلب کرلی جبکہ انہوں نے آگ کے واقعہ کی تحقیقات کا حکم بھی دے دیا۔بعد ازاں، چیف کمشنر اسلام آباد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آگ پر 100 فیصد قابو پایا جا چکا ہے، 500 دکانوں کا نقصان پہنچا ہے۔چیف کمشنر اسلام آباد نے کہا کہ آج کی آگ 11 بج کر 7 منٹ پرلگی، موقع پر موجود فائیر برگیڈ نے فوری کام کا آغاز کر دیا، بارش کی وجہ سے ہماری ٹیم پہلے سے ہی فیلڈ میں موجود تھی، 31 فائیر برگیڈ کی گاڑیوں نے آگ بھجانے کے عمل میں حصہ لیا، واٹر باوزرز بھی امدادی کارروائیوں میں شامل رہے۔چیف کمشنر اسلام آباد نے کہاکہ آئی جی صاحب کو کہہ کر علاقے کو سیل کروا دیا ہے تاکہ آگ دوبارہ نہ بھڑک اٹھے، جس جس کا نقصان ہوا اس کا ازالہ کیا جائے گا، وزیراعظم کی ہدایت ہے جس کا بھی نقصان ہے اس کو ادائگی کی جائے۔انہوں نے کہا کہ بازار میں آگ لگنے کی وجوہات کا پتہ کرنے کے لیے ڈی سی اور پولیس حکام کی مشترکہ کمیٹی بنائیں گے، 7 دن میں کمیٹی رپورٹ دے گی، جب کہ آگ لگنے کے واقعات کو کیسے روکا جائے اس پر اقدامات کریں گے، کمیٹی کی سربراہی ڈپٹی کمشنر خود کرے گا جس میں ٹیکنیکل لوگ شامل کیے جائیں گے۔