مشترکہ اجلاس میں 33 بلز بلڈوز کر کے حکومت نے پارلیمان اور جمہوریت کی توہین کی،شیری رحمن

0
57

اسلام آباد (این این آئی)نائب صدر پیپلز پارٹی سینیٹر شیری رحمان نے کہا ہے کہ مشترکہ اجلاس میں 33 بلز بلڈوز کر کے حکومت نے پارلیمان اور جمہوریت کی توہین کی۔ اپنے بیان میں سینیٹر شیری رحمان نے کہاکہ آئین اور پارلیمانی قوائد و ضوابط کا کھل کر مذاق اڑایا گیا۔ انہوںنے کہاکہ گزشتہ روز کا دن پاکستان کی پارلیمانی تاریخ کے سیاہ ترین دنوں میں شامل ہوگا، طاقت اور مصنوعی اکثریت کا بدترین مظاہرہ دنیا نے دیکھا۔ انہوںنے کہاکہ ثابت ہو چکا اسپیکر پارلیمان کے کسٹوڈین نہیں، ایک جماعت کے نمائندے ہیں،اتحادیوں کی جبری حاضری اور مشاورت بغیر قانون سازی اب متنازعہ ہو چکی ہے۔ شیری حمن نے کہاکہ ای سی پی 2010 سے ای،ووٹنگ مشین پر اپنے خدشات کا اظہار کر رہا ہے۔ سینیٹر شیری رحمن نے کہاکہ قوم اور الیکشن کمیشن پر الیکٹرانک ووٹنگ مشین مسلط کی جا رہی ہے،ای سی پی ایـووٹنگ مشین کے استعمال، اخراجات اور اس کی ساکھ پر کئی بار سوالات اٹھا چکا ہے۔ انہوںنے کہاکہ اتنے کم وقت میں 8 لاکھ مشین منگوانا، عملے کو ٹریننگ دینا اور عوام کو آگاہی دینا ممکن ہی نہیں ہے،یہ انتخابات پر ڈاکا ڈالنے کے حربے تلاش کر رہے، کیوں کہ عوام نے ان کو ابھی سیمسترد کر دیا ہے