ایک وقت آئے گا جب عمران خان کا ٹکٹ لینے والا کوئی نہیں ہوگا،فیصل واوڈا

0
0

کراچی(این این آئی)پاکستان تحریک انصاف کے سابق رہنما اور عمران خان دور میں وفاقی وزیر رہنے والے فیصل واوڈا نے کہاہے کہ ابھی تو چیئرمین پی ٹی آئی کہہ رہے ہیں کہ میں جسے ٹکٹ دوں گا وہی جیتے گا لیکن ایک وقت آئے گا جب ان کا ٹکٹ لینے والا کوئی نہیں ہوگا،میں پی ٹی آئی کے کرپشن کے کیسز بھی سامنے لائوں گا کہ ان لوگوں نے اقتدار میں آکر جائیدادیں بنائیں۔ سب سے غلط کام جو انھوں نے کیا وہ شہدا کی بے حرمتی کرنے کا ہے۔خصوصی گفتگوکرتے ہوئے سابق پی ٹی آئی رہنما فیصل واوڈا نے کہاکہ سب چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی جگہ لینا چاہتے ہیں ابھی تو گھنٹے اور دن گزرے ہیں ابھی دنوں، ہفتوں اور مہینوں میں دیکھیں گے کہ ایک دو لوگ ہی بچیں گے ابھی اور لوگ بھی عمران خان کو مورد الزام ٹھہرا کر پارٹی سے نکلتے اور لاتعلقی کرتے نظر آئیں گے۔انہوں نے کہاکہ اگر عمران خان کو 20 سال بعد پتا چلا ہے کہ گٹر کے کیڑوں اور سانپوں کو ملک سونپ رکھا تھا تو انھوں نے کیا ملک چلانا ہے جو ملک کے شہدا کی قبر کا احترام نہ رکھ سکے جو جانور اور انسان میں فرق نہ رکھ سکے جو غلاظت اور صفائی میں فرق نہ رکھ سکے وہ پاکستان کیا سنبھالیں گے شرم آنی چاہیے۔ مجھے نکالنے پر پارٹی کے لوگ میری خبر بنارہے تھے لیکن آج خود ہی خبر بن گئے ہیں۔ عمران خان کہہ رہے ہیں میں جسے ٹکٹ دوں گا وہی جیتے گا لیکن ان کا ٹکٹ لینے والا کوئی ہوگا ہی نہیں۔فیصل واوڈا نے کہاکہ سب کو معلوم ہے کہ سابق آرمی چیف جنرل باجوہ کی پگڑی کس نے اچھالی کیا وہ فوج کے سربراہ نہیں تھے۔ کیا فوج کے شہدا کا مذاق نہیں اڑایا گیا ، سب کو پتا ہے کہ فوج کے سپہ سالار کی بات کی جاتی رہی اور اب عمران خان کیسے کہہ سکتے ہیں کہ میں نے فوج کیخلاف بات نہیں کی جبکہ شہدا کی بے حرمتی کرنے کے بعد پی ٹی آئی کارڈ کے پتوں سے بھی زیادہ تیزی سے گری ہے۔سابق وفاقی وزیر نے کہاکہ مراد سعید کو عمران خان نے چھپایا ہے یا انھیں پتا ہے کہ وہ کہاں چھپے ہیں۔ وہ چیئرمین پی ٹی آئی کے بہت قریب رہا بہت سے احکامات پر عمل بھی کیا اور پیغام رسانی کا کام بھی کرتا رہا اور مراد سعید ساتھ ہی عینی شاہد بھی ہوں گے بہت ساری چیزوں کے تو اس تناظر میں بڑی اہمیت ہے مراد سعید کی۔فیصل واوڈا نے کہا کہ اس ساری صورتحال کو دیکھ کر عمران کی ذمہ داری بنتی ہے کہ مراد سعید کی جان و مال کی حفاظت کریں وہ اس ذمہ داری سے دستبردار نہیں ہوسکتے۔