بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ ختم کرنا پڑے گا، پاکستان

0
69

اسلام آباد(این این آئی) ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری نے کہا ہے کہ بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے سلسلے کو ختم کرنا پڑے گا،مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے خلاف یورپی پارلیمنٹ کے ارکان کے خط کا خیرمقدم کرتے ہیں، اراکین یورپی پارلیمنٹ کا صدر اور نائب صدر یورپی کمیشن کو خط عالمی برادری کی جانب سے بھارت کی مذمت و ملامت کرنے کا ایک اور کھلا ثبوت ہے، مقبوضہ جموں وکشمیر میں حالات ‘معمول’ پر ہونے کا مسلسل بھارتی پراپیگنڈہ بے سوداورناکام ثابت ہوا ہے۔صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری نے کہا کہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے خلاف یورپی پارلیمنٹ کے ارکان کے خط کا خیرمقدم کرتے ہیں، اراکین یورپی پارلیمنٹ کا صدر اور نائب صدر یورپی کمیشن کو خط عالمی برادری کی جانب سے بھارت کی مذمت و ملامت کرنے کا ایک اور کھلا ثبوت ہے۔زاہد حفیظ چوہدری نے کہا کہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں حالات ‘معمول’ پر ہونے کا مسلسل بھارتی پراپیگنڈہ بے سوداورناکام ثابت ہوا ہے، حالات ‘معمول’ پر ہونے کے جھوٹے اور خلاف حقیقت بیانئے کو پھیلانے کیلئے بھارت کا ایڑی چوٹی کا زور کام نہ آیا، مسلسل پراپیگنڈے کے باوجود عالمی برادری کی جانب سے بھارت کی مذمت اور ملامت کا سلسلہ مزید زور پکڑتا جارہا ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ 5 اگست 2019 کے بعد سے بالخصوص مقبوضہ کشمیر میں بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں ، بہیمانہ جبرواستبداد میں کئی گنا اضافہ ہوا، 5 اگست کے بعد سنگین صورتحال پر سلامتی کونسل میں کم ازکم تین مرتبہ جموں وکشمیر کا مسئلہ زیرغور آچکا ہے، 2018 اور 2019 میں انسانی حقوق کے لئے اقوام متحدہ کے ہائی کمشن کے دفتر کی دو رپورٹس جاری ہوئیں، رپورٹس کہتی ہیں کہ آزاد کمیشن تشکیل دے کر بھارتی زیر قبضہ علاقوں میں انسانی حقوق کی سنگین اور منظم خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرائیں، دنیا بھر کی پارلیمنٹس میں جموں وکشمیر کے مسئلے پر بحث ہوئی