لاہور ہائیکورٹ نے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کے تقرر کے خلاف شیخ رشید کی درخواست مسترد کر دی

0
464

لاہور ( این این آئی) لاہور ہائی کورٹ نے نگران وزیراعلی پنجاب محسن نقوی کے تقرر کے خلاف دائر درخواست مسترد کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ الیکشن کمیشن کے پاس نگراں وزیر اعلی کی تقرری کا مکمل اختیار ہے ،محسن نقوی کی نگراں وزیر اعلی تقرری کا فیصلہ آئین اور قانون کے تحت درست تھا ۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے سابق وزیر داخلہ اور سربراہ عوامی لیگ شیخ رشید کی درخواست پر سماعت کی۔سماعت کے آغاز پر عدالت نے شیخ رشید کے وکیل اظہر صدیق سے استفسار کیا کہ درخواست گزار نے خود بھی کوئی نام دیئے تھے؟۔اس پر اظہر صدیق نے جواب دیا کہ درخواست گزار ایک ووٹر ہیں، پہلے دن سے سب کو پتہ تھا کہ محسن نقوی وزیر اعلی ہوں گے۔عدالت نے ریمارکس دیے کہ ہمیں صرف یہ دیکھنا محسن نقوی کی تقرری کے لیے کیا طریقہ کار اختیار کیا گیا، الیکشن کمیشن کے پاس نگراں وزیر اعلی کی تقرری کے لیے مکمل اختیار ہے، نگران وزیر اعلی کا کام صرف انتخابات کرانا ہے، اگر الیکشن کمیشن خود ہی انتخابات نہ کرانے کا کہہ دیتا ہے تو پھر کیا ہوسکتا ہے۔شیخ رشید کے وکیل اظہر صدیق نے کہا کہ محسن نقوی کے تقرر پر پہلے دن سے سوالات اٹھ رہے ہیں۔دوران سماعت الیکشن کمیشن کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن ایک آئینی ادارہ ہے اور آئین کے تحت کام کرتا ہے، الیکشن کمیشن نے متفقہ طور پر نگراں وزیر اعلی کی تقرری کی، فریقین دیئے گئے وقت میں نگراں وزیر اعلی کا تقرر نہیں کر سکے تھے۔انہوں نے استدعا کی کہ الیکشن کمیشن نے آئین کے تحت محسن نقوی کی تعیناتی کی، لہٰذا درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کیا جائے