حلقہ بندی کمیشن کی ٹیم چھ جولائی کو مقبوضہ جموںوکشمیر کا دورہ کرے گی

0
45

سرینگر(این این آئی)بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموںوکشمیرمیں نریندر مودی کی فسطائی بھارتی حکومت کے مذموم منصوبے کو آگے بڑھانے کیلئے بھارتی انتخابی حلقہ بندی کمیشن کی تین رکنی ٹیم چیف الیکشن کمشنر سشیل چندرا کی سربراہی میں چھ سے نو جولائی تک مقبوضہ علاقے کا چار روزہ دورہ کرے گی۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق حلقہ بندی کمیشن کی خاتون سربراہ ریٹائرڈ جسٹس رنجنا ڈیسائی کمیشن کے دیگر دو ارکان اور چیف الیکشن کمیشن سشیل چندرا کے ہمراہ سرینگر اور جموںسمیت کئی علاقوں کا دورہ کر کے سیاسی جماعتوں کے رہنمائوں ،مقبوضہ علاقے کے اعلیٰ افسران اور ضلعی ترقیاتی کونسل کے اراکین کے ساتھ ملاقاتیںکریں گی۔تجزیہ نگاروں اور ماہرین کا کہنا ہے کہ مقبوضہ علاقے میں حلقہ بندیوں کا عمل دراصل مودی حکومت کی طرف سے 5اگست2019کو مقبوضہ علاقے کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے غیر قانونی اور یکطرفہ عمل کا نتیجہ ہے۔ تجزیہ نگاروںکا کہنا ہے کہ انتخابی حلقہ بندیوں کے اس مذموم عمل میں مقبوضہ علاقے کی بھارت نواز سیاسی جماعتوں یا کسی بھی کشمیری تنظیم کی شرکت 5اگست 2019کے مودی حکومت کے ناروا اقدامات کو جواز بخشنے کے متراد ف ہو گا۔ انہوںنے کہامقبوضہ علاقے میں حلقہ بندیوں کے عمل کے خلاف آوازیں اٹھنا شروع ہو گئیں ہیں۔ ماہرین کا ماننا ہے کہ مقبوضہ علاقے کی سیاسی جماعتوں کو یہ با ت سمجھ لینا چاہیے کہ اگر وہ انتخابی حد بندی کے اس بھارتی عمل میں حصہ لیتی ہیں تو اس سے مودی حکومت کے مذموم منصوبوں کی تقویب حاصل ہو گی ۔