اگر کوئی بیان دیتا ہے تو اس کو سنیں اور بر داشت کریں ، علی ظفر فواد چوہدری کے حق میں بول پڑے

0
56

اسلام آباد (این این آئی) سابق وزیر اعظم عمران خان کے وکیل بیرسٹر علی ظفر نے سابق وزیر فواد چوہدری کی گرفتاری پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ اگر کوئی بیان دیتا ہے تو اس کو سنیں اور بر داشت کریں ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے علی ظفر نے کہاکہ آزادی اظہار رائے کا حق ہوتا ۔ انہوںنے کہاکہ یہ معلوم نہیں فواد چوہدری کو کیوں گرفتار کیا گیا،سنا ہے کہ ان نے کچھ بیان دیا تھا ،اگر کوئی بیان دیتا ہے تو اس کو سنیں اور برداشت کریں۔ انہوںنے کہاکہ نگران حکومت آ گئی ہے اس کو آزاد اور خودمختار ہونا چاہیے۔ علی ظفر نے کہاکہ یہ آئین کے خلاف ہے کہ سیاسی بنیادوں پر آپ لیڈر شپ کو گرفتار اور ہراساں کرنا شروع کر دیں ۔ انہوںنے کہاکہ آزادی اظہار رائے میں آپ ایک لیمٹ میں کچھ کہ سکتے ہیں اس سے زیادہ بولنے پر قانونی کارروائی کی جاسکتی ہے۔ انہوںنے کہاکہ اگر سیاسی بنیادوں پر آپ کو گرفتار کیا جائے تو یہ غیر آئینی اور غیر قانونی ہے۔ علی ظفر نے کہاکہ الیکشن کمیشن نے 8 ایسے آرڈرز بتا سکتا ہوں جو پی ٹی آئی کے خلاف دئیے ہیں جو ہائیر کورٹس میں ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ان آرڈرز سے یہ تاثر ملتا ہے کہ الیکشن کمیشن ایک ہی جماعت کے خلاف کاروائی کر رہا ہے،فارن فنڈنگ کیس سے بھی تاثر ملتا ہے کہ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کے اکاؤنٹس کو دیکھا ہے دیگر جماعتوں کے نہیں۔